zubair ali zai

سنن الترمذی، حدیث 3956

حکم الحدیث: صحیح أو حسن — بتحقیق الشیخ زبیر علی زئی رحمہ اللہ

حدثنا هارون بن موسى بن ابي علقمة الفروي المدني حدثني ابي عن هشام بن سعد عن سعيد بن ابي سعيد عن ابيه عن ابي هريرة رضي الله عنه ان رسول الله صلى الله عليه وسلم قال قد اذهب الله عنكم عبية الجاهلية وفخرها بالآباء مومن تقي وفاجر شقي والناس بنو آدم وآدم من تراب قال ابو عيسى هذا حديث حسن وهذا اصح عندنا من الحديث الاول وسعيد المقبري قد سمع ابا هريرة ويروي عن ابيه اشياء كثيرة عن ابي هريرة رضي الله عنه وقد روى سفيان الثوري وغير واحد هذا الحديث عن هشام بن سعد عن سعيد المقبري عن ابي هريرة عن النبي صلى الله عليه وسلم نحو حديث ابي عامر عن هشام بن سعد

ابوہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا:' اللہ نے تم سے جاہلیت کی نخوت اور اپنے باپ دادا پر فخر کو ختم کردیا ہے، اب لوگ مومن و متقی ہیں یافاجرو بدبخت اور سارے لوگ آدم کی اولاد ہیں اور آدم مٹی سے بنائے گئے ہیں'۔ امام ترمذی کہتے ہیں: ۱- یہ حدیث حسن اور یہ ہمارے نزدیک پہلی روایت سے زیادہ صحیح ہے،۲- سعید مقبری نے ابوہریرہ رضی اللہ عنہ سے سنا ہے اور وہ اپنے باپ کے واسطے سے بہت سی چیزیں ابوہریرہ سے روایت کرتے ہیں،۳- سفیان ثوری اور کئی دوسرے راویوں نے یہ حدیث ہشام بن سعد سے، ہشام نے سعید مقبری سے اور سعید مقبری نے ابوہریرہ رضی اللہ عنہ کے واسطہ سے نبی اکرم ﷺ سے ابوعامر کی حدیث کے مانند روایت کی ہے جسے وہ ہشام بن سعد سے روایت کرتے ہیں۔

Page updated on 9/1/2020, 4:31:13 PM

IshaatulHadith Hazro © 2020 (websites) - contact us